• esb centre 37 mint road fordsburg 2092, Johannesburg, South Africa.
  • (078) 642-8081
  • info@pasa1.com
DONATE NOW
In PASA NEWS

پاکستان ایسوسی ایشن ساؤدرن افریقہ PASA پاکستانی کمیونٹی کی نمائندہ تنظیم ہے جس کا مقصد پردیس میں مقیم پاکستانیوں کی فلاح اور اصلاح کے ساتھ ساتھ لوکل کمیونٹی کی خدمت کر کے پاکستان کا نام روشن کرنا ہے۔

پاکستان ایسوسی ایشن ساؤدرن افریقہ PASA پاکستانی کمیونٹی کی نمائندہ تنظیم ہے جس کا مقصد پردیس میں مقیم پاکستانیوں کی فلاح اور اصلاح کے ساتھ ساتھ لوکل کمیونٹی کی خدمت کر کے پاکستان کا نام روشن کرنا ہے۔ بطورِ نمائندہ تنظیم PASA ہمیشہ پاکستان ہائی کمیشن کے ساتھ ملکر ریاستِ پاکستان کی ممد و معاون کے طور پر اپنی کمیونٹی کو قانون کا پابند رکھنے, پاکستان کا تشخّص برقرار رکھنے اور قومی و مذہبی ایّام کو انکی رُوح کے مطابق منانے کو اپنا فریضہ سمجھتی ہے۔پاکستان ہائی کمیشن سے رُخصت ہونیوالے اور تشریف لانے والے تمام افسران PASA کے لیے بہت محترم اور بطورِ ریاست کے نمائندہ ہمارے لیے اہمیّت کے حامل ہیں اور یہی وجہ ہے کہ ان افسران کی آمد کے وقت کمیونٹی کے ساتھ انکی ملاقات, ان تک کمیونٹی کے اہم مسائل پہنچانا, اپنے تعاون کی یقین دہانی کروانا اور مِل جُل کر منظّم انداز میں کمیونٹی کے لیے بہتری کے مواقع پیدا کرنا ہے اور اسی سلسلے میں پاکستان ہائی کمیشن پریٹوریا میں نئے تشریف لانے والے ڈپٹی ہائی کمشنر جناب میاں فہدامجد صاحب کے اعزاز میں افطار ڈنر کی تقریب جوہانسبرگ کے معروف پاکستانی ریسٹورینٹ میں رکھی گئی تھی۔تقریب میں PASA کی تمام مرکزی و صوبائی لیڈرشپ اور پاکستان ہائی کمیشن کے سٹاف نے شرکت کی ۔سٹیج سیکرٹری کے فرائض PASA کے ڈپٹی جنرل سیکرٹری خالدمحمودسلہریا نے ادا کیئے۔تلاوت کلامِ پاک ICSA کے مرکزی جنرل سیکرٹری حافظ ندیم احمد نے پیش کی نعتِ رسُولِ مقبول ص ملک عبدالغفّار نے پیش کی اسکے بعد استقبالیہ کلمات پاسا جوہانسبرگ کے صدر رانا زاہداقبال نے ادا کرتے ہوئے کہا کہ سابقہ ڈپٹی ہائی کمشنر جناب عدنان جاوید صاحب کی خدمات اور ہمہ وقت کمیونٹی کی خدمت کے لیے پیش پیش رہنا ہم سب پردیسوں کے لیے بہت حوصلہ افزاء رہا جبکہ نئے ڈپٹی ہائی کمشنر جناب میاں فہدامجد صاحب کی سادگی, ملنسار طبیعت اور اپنے کام سے مکمل آگاہی پہلی ملاقات میں ہی نظر آگئی تھی اور ہم اُمید کرتے ہیں کہ میاں فہدامجد صاحب مسائل میں گھری پاکستانی کمیونٹی کے لیے بہت بڑا سہارا ثابت ہوں گے۔ناردرن ناٹال یونٹ کے صدر چوہدری وقار احمدوڑائچ نے مہمانِ خصوصی کو خوش آمدید کہتے ہوئے کہا کہ پاکستانی کمیونٹی 25 سال سے اس مُلک کے طُول و عرض میں کاروبار کررہی ہے اور اپنے کاروبار میں سے یہاں کی مستحق کمیونٹی کی مدد کے ساتھ ساتھ پاکستان میں بھی اپنے کمزور بھائیوں کے لیے سہارا بنے ہوئے ہیں چوہدری وقار نے مزید کہا کہ کووڈ کی آمد اتنا پریشان کُن امر تھا کہ اس آزمائش میں افراد تو کیا حکومتوں کے لیے مشکل ہوگیا تھا کہ غربت کی لکیر کے نیچے زندگی گزارنے والے مزدور طبقے کی کیسے دیکھ بھال کی جائے ایسے میں پاسا نے آگے بڑھ کر حکومت کا ساتھ دیا اور ہم نے پاسا کے جھنڈے تلے ہزاروں خاندانوں تک خوراک اور ادویات پہنچائیں اور اپنے ارد گرد بسنے والے خاندانوں کو احساس دلایا کہ ہم یہاں صرف کاروبار کرنے نہیں آئے بلکہ اسلامی روایات کے مطابق مشکلات میں آپکے ساتھ کھڑے ہونا بھی ہمارا دینی فریضہ ہے چوہدری وقار نے بتایا کہ KZN میں آنیوالا سیلاب ایک بار پھر مالی طور پر کمزور طبقے کے لیے بہت بڑی پریشانی لایا ہے اور PASA ایک بار پھر پریشانی کے اس لمحے لوکل کمیونٹی کی مدد کے لیے سرگرم ہے اور ہم اگلے چند دنوں میں بنیادی ضروریاتِ زندگی کے ساتھ متاثرین تک پہنچ رہے ہیں۔اسلامک سرکل آف سدرن افریقہ ICSA کے مرکزی صدر ڈاکٹرہارُون الرشید عبّاسی نے رمضان کے اصل مقصد صبر , رضائے الٰہی کے لیے محنت اور خلوصِ نیّت پر روشنی ڈالتے ہوئے شُرکاء کو آخری عشرہ میں مزید عبادات کی طرف ترغیب دلائی۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے PASA کے مرکزی صدر خالقدادبھٹی نے پاسا کے پراجیکٹس Feed the Need. فوت شُدگان کے خاندانوں کے لیے PDWF پراجیکٹ ۔ باہمی معاہدات کے لیے اسٹام پیپر کی طرز پر معاہدہ فارم اور کشمیری و فلسطینی مجبور و مظلوم مسلمانوں کے حق میں یومِ دُعا کے حوالے سے بات کیمرکزی صدر PASA نے بتایا کہ 2021 میں PASA نے فوت شُدگان کے ہر خاندان کو 5000 رینڈ فی کس ادا کئے 7 بچیوں کی شادی میں تعاوُن کیا اور سال بھر مرحومین کے خاندانوں سے رابطے میں رہتے ہوئے انکو درپیش مسائل کو حل کرنے کی کوشش کی جبکہ 2022 میں بھی ہم تمام خاندانوں کو عید گفٹ کے طور پر 5000 رینڈ فی خاندان پیش کرچُکے ہیں ۔ 15 بچیوں کی شادی کے لیے فنڈز کا اعلان کرتے ہیں۔ تعلیم حاصل کرنے والے بچوں کی تعلیم جاری رکھنے کے لیے ہم اپنا تعاوُن پیش کررہے ہیں جبکہ آج سے PASA یہ بھی اعلان کرتی ہے کہ آئندہ میتیں پاکستان بھیجنے کے لیے بھی PASA فنڈز مہیا کرئے گی (ان شاءاللہ) تاہم اس سلسلے میں ہمیں پاکستان ہائی کمیشن کی طرف سے بھی تعاوُن کی ضرورت ہے کیونکہ ایمبیسی کے پاس بھی فنڈز موجود ہوتے ہیں اور اگر ایمبیسی بھی تعاون کرئے تو ان فنڈز سے ہم ہر میّت کا جسدِ خاکی پاکستان بجھوا سکتے ہیں۔کشمیر کے حوالے سے پاسا ہمیشہ سرگرم رہی ہے اور گزشتہ سال کی طرح امسال بھی جمعتُہ الوداع کو کشمیر و فلسطین کے مسلمانوں کے لیے یومِ دُعا کے طور پر منا رہے ہیں اور اس سلسلے میں تمام مساجد کے خطیب حضرات کو تحریری گزارش بھیج رہے ہیں۔آخری خطاب کے لیے سٹیج سیکرٹری خالدمحمود سلہریا نے جب مہمانِ خصوصی ڈپٹی ہائی کمشنر میاں فہد امجد کو خطاب کے لیے بُلایا تو تمام شرکاء نے کھڑے ہوکراستقبال کیا اپنے خطاب میں مہمانِ خصوصی نے PASA کی تمام لیڈرشپ کا اس خوبصورت محفل کے انعقاد پر شُکریہ ادا کرتے ہوئے اپنے ہر ممکن تعاوُن کی یقین دہانی کروائی دہری شہریت کے حوالے سے کئے گئے سوال کے جواب میں اُنہوں نے بتایا کہ پاکستان ہائی کمیشن پہلے ہی اس سلسلے میں سرگرم ہے اور مثبت حل کے لیے ہم پُراُمید ہیں۔ایک سوال کے جواب میں اُنہوں نے کہا کہ پاکستان میں موبائل فون کی بندش اور عائد ٹیکس کے حوالے سے کمیونٹی کا پیغام حکومت تک ضرور پہنچائیں گے۔ایسٹرن کیپ اور خاص طور پر امٹاٹا کے گرد و نواح میں پیش آنیوالے اغواء برائے تاوان کے واقعات ہمارے لیے دلخراش ہیں ڈپٹی ہائی کمشنر نے کہا کہ میں نے اپنا پہلا دورہ ہی امٹاٹا کا کیا ہے وہاں کے میئر اور قانون نافذ کرنےوالے اداروں سے ملاقاتیں کی ہیں اور اعلٰی سطح پر ان مسائل کو حل کروانے کے لیے رابطے میں ہیں۔آخر پہ ایک بار پھر ڈپٹی ہائی کمشنر میاں فہدامجد نے PASA کا شکریہ ادا کیا کمیونٹی کے ہر فرد کے لیے ہائی کمیشن کو اُنکا گھر قرار دیتے ہوئے ہمیشہ تعاوُن کی یقین دہانی کروائی۔تقریب میں شرکت کے لیے کیپ ٹاؤن سے پاسا کے صدر ملک فیصل اعوان ۔کشمیر کمیٹی کے چیئرمین میاں محمد زکریا ۔ شہباز خان مہمند چوہدری محمدوقار وڑائچ اور کامران بٹ نیو کاسل سے تشریف لائے جبکہ جوہانسبرگ سے چوہدی شمریزاحمددھکڑ۔چوہدری لیاقت جٹ۔ملک محمد وسیم۔جنیدصفدر۔رانامحمدماجد۔ندیم اشرف چستی۔رانا سہیل یوسف۔سعید میؤ۔چوہدری ارشد علی۔ملک ندیم اور عبدالمنان نے شرکت کی۔